...
Skip to content

Worship is built upon the Sharia and Ittiba (following the Messenger)

Worship is built upon the Sharia and Ittiba (following the Messenger)

العبادات مبناها على الشرع والاتباع
لشَيْخُ الإِسْلَامِ ابن تيمية

رَحِمَهُ الله

Translated by: Abbas Abu Yahya

 




Shaykh ul Islaam Ibn Taymeeyah Rahimahullaah said:

‘Worship is built upon the Sharia and Ittiba (following the Messenger), and not upon desires and Ibtida (innovations).

Islaam is built upon two principles:
#أحدهما : أن نعبد الله وحده لا شريك له.
# One of which is that we worship Allaah alone who has no partners.
#والثاني : أن نعبده بما شرعه على لسان رسوله صلى الله عليه وسلم، لا نعبده بالأهواء والبدع،
# the second is that we worship Allaah with what was legislated on the tongue of His Messenger  sallAllaahu alayhi wa sallam. We do not worship Him with desires and Bida.

Like Allah Ta’ala said:
{ثُمَّ جَعَلْنَاكَ عَلَىٰ شَرِيعَةٍ مِّنَ الْأَمْرِ فَاتَّبِعْهَا وَلَا تَتَّبِعْ أَهْوَاءَ الَّذِينَ لَا يَعْلَمُونَ، إِنَّهُمْ لَن يُغْنُوا عَنكَ مِنَ اللَّهِ شَيْئًا}
《Then We have put you (O Muhammad) on a plain way of (Our) commandment. So follow that (Islamic Monotheism and its laws), and do not follow the desires of those who know not. Verily, they can avail you nothing against Allaah (if He wants to punish you).》
[al-Jatheeyah: 18-19]

Allaah Ta’ala said:
{أَمْ لَهُمْ شُرَكَاءُ شَرَعُوا لَهُم مِّنَ الدِّينِ مَا لَمْ يَأْذَن بِهِ اللَّهُ}
《Or have they partners with Allaah (false gods), who have instituted for them a religion which Allaah has not allowed.》

It is not allowed for anyone to worship Allaah except with what His Messenger  sallAllaahu alayhi wa sallam legislated from the obligatory duties and the recommended ones,  we do not worship Him with innovated matters.

وليس لأحد أن يعبد إلا الله وحده
It is not permissible for anyone to worship except Allaah alone.
◽ فلا يصلي إلا لله
Do not pray except to Allaah.
◽ ولا يصوم إلا لله
Do not fast except for Allaah.
◽ولا يحج إلا بيت الله
Do not make pilgrimage except to the House of Allaah.
◽ ولا يتوكل إلا على الله
Do not totally rely except upon Allaah.
◽ولا يخاف إلا الله
Do not fear except Allaah.
◽ ولا ينذر إلا لله
Do not make a vow except for Allaah.
◽ولا يحلف إلا بالله
Do not make an oath except by Allaah.’

[Majmoo al-Fatawa 1/63]



العبادات مبناها على الشرع والاتباع

❍ قال شَيْخُ الإِسْلَامِ ابن تيمية رَحِمَهُ الله :
(( العبادات مبناها على الشرع والاتباع، لا على الهوى والابتداع،
🔰 فإن الإسلام مبني على أصلين :
📋 #أحدهما : أن نعبد الله وحده لا شريك له.
📋 #والثاني : أن نعبده بما شرعه على لسان رسوله صلى الله عليه وسلم، لا نعبده بالأهواء والبدع،
⬜كما قال تعالى :{ثُمَّ جَعَلْنَاكَ عَلَىٰ شَرِيعَةٍ مِّنَ الْأَمْرِ فَاتَّبِعْهَا وَلَا تَتَّبِعْ أَهْوَاءَ الَّذِينَ لَا يَعْلَمُونَ، إِنَّهُمْ لَن يُغْنُوا عَنكَ مِنَ اللَّهِ شَيْئًا} [الجاثية : 18، 19].
⬜وقال تعالى :{أَمْ لَهُمْ شُرَكَاءُ شَرَعُوا لَهُم مِّنَ الدِّينِ مَا لَمْ يَأْذَن بِهِ اللَّهُ} الشورى
💢فليس لأحد أن يعبد الله إلا بما شرعه رسوله صلى الله عليه وسلم
🔳 من واجب ومستحب
⛔ لا نعبده بالأمور المبتدعة.
🔳وليس لأحد أن يعبد إلا الله وحده
◽ فلا يصلي إلا لله
◽ ولا يصوم إلا لله
◽ولا يحج إلا بيت الله
◽ ولا يتوكل إلا على الله
◽ولا يخاف إلا الله
◽ ولا ينذر إلا لله
◽ولا يحلف إلا بالله
📘مجموع الفتاوى (63/1).



Urdu

✵عبادات کی بنیاد شریعت اور

اتباعِ رسول ﷺ پر ہے✵

❍ شيخ الإسلام ابن تيمية

رحمہ اللہ فرماتے ہیں:

(( عبادات کی بنیاد شریعت اور (نبی ﷺ کی) اتباع پر ہے، نا کہ خواہش نفس اور بدعت کرنے پر،

🔰 کیونکہ اسلام دو بنیادوں پر مبنی ہے:
📋 #پہلی: کہ ہم صرف اُس اللہ کی عبادت کریں جسکا کوئی بھی شریک نہیں.
📋 #اور دوسری : کہ اُسکی عبادت ان اعمال کے ذریعے سے کریں جن کو اُس نے اپنے رسول ﷺ کی زبان پر مشروع کیا، ہم اُسکی عبادت خواہشات نفس اور بدعات کے ذریعے سے نہیں کرتے ہیں،

⬜ جیسے کہ اللہ تعالٰی فرماتے ہیں  :”ثُمَّ جَعَلْنَاكَ عَلَىٰ شَرِيعَةٍ مِّنَ الْأَمْرِ فَاتَّبِعْهَا وَلَا تَتَّبِعْ أَهْوَاءَ الَّذِينَ لَا يَعْلَمُونَ، إِنَّهُمْ لَن يُغْنُوا عَنكَ مِنَ اللَّهِ شَيْئًا”  ﴿پھر ہم نے آپ کو دین کی (ظاہر) راه پر قائم کردیا، سو آپ اسی پر لگے رہیں اور نادانوں کی خواہشوں کی پیروی میں نہ پڑیں۔ (یاد رکھیں) کہ یہ لوگ ہرگز اللہ کے سامنے آپ کے کچھ کام نہیں آسکتے۔﴾ [الجاثية : 18، 19].
⬜وقال تعالى :”أَمْ لَهُمْ شُرَكَاءُ شَرَعُوا لَهُم مِّنَ الدِّينِ مَا لَمْ يَأْذَن بِهِ اللَّهُ” ﴿کیا ان لوگوں نے ایسے (اللہ کے) شریک (مقرر کر رکھے) ہیں جنہوں نے ایسے احکام دین مقرر کر دیئے ہیں جو اللہ کے فرمائے ہوئے نہیں ہیں﴾ الشورى

💢 اس لیے کسی کے لیے بھی جائز نہیں ہے کہ وہ اللہ کی عبادت کریں،  سوائے ان واجب اور مستحب اعمال کے ذریعے سے جنہیں اللہ کے رسول ﷺ نے مشروع قرار دیا۔

⛔ ہم اسکی عبادت بدعات کے ذریعے سے نہیں کرتے ہیں.

🔳 اور کسی کے لیے واحد اللہ کے سوا کسی کی عبادت کرنا جائز نہیں ہے۔
◽پس وہ صرف اور صرف اللہ ہی کے لئے نماز ادا کریں۔
◽  اور وہ صرف اور صرف اللہ ہی کے لئے روزہ رکھیں۔
◽ اور وہ صرف اور صرف اللہ کے گھر(کعبہ) کا حج کریں۔
◽ اور وہ صرف اور صرف اللہ ہی پر توکل کریں۔
◽اور وہ صرف اور صرف اللہ ہی سے ڈریں۔
◽ اور وہ صرف اور صرف اللہ ہی کے لئے نذر مانیں۔
◽ اور وہ صرف اور صرف اللہ ہی کی قسم کھائیں۔

📘مجموع الفتاوى (63/1).

Seraphinite AcceleratorOptimized by Seraphinite Accelerator
Turns on site high speed to be attractive for people and search engines.