Do you know the Blessing of Forgetfulness?

Do you know the Blessing of Forgetfulness?

Translated
By
Abbas Abu Yahya



Al-Hafidh Ibn al-Qayyim -Rahimahullaah- (d. 751 A.H.) said:

‘From the strangest of blessings upon a person is the blessing of forgetting!

Indeed if it was not for forgetting he would not be pleased with anything (i.e. he forgot that matter and it made himself feel better after having forgotten about it), nor would any grief or sorrow end, nor would he be able to console himself from affliction, and sadness would not die off, nor would he be free from someone having envy of him, nor would he enjoy anything from the pleasures of the Dunyaa whilst remembering all his shortcomings and sins.

Nor would he have hope of neglect from the enemy, nor a respite from the envious one, so reflect upon the blessing of Allaah upon that person in relation to remembering and forgetting, along with their differences and their opposites and that Allaah placed for each one of them a different type of benefit.’

[From: ‘Miftah Dar as-Sa’ada’ by Ibn al-Qayyim 2/788]



Arabic

قال ابن القيم رحمه الله:
ومن أعجب النعم عليه نعمة النسيان! فإنه لولا النسيان لما سلا شيئا ) أي نسيه وطابت نفسه بعد فراقه) ولا انقضت له حسرة ولا تعزى بمصيبة  ولا مات له حزن ولا بطل له حقد ولا استمتع بشيء من متاع الدنيا مع تذكر الآفات ولا رجا غفلة من عدو ولا فترة من حاسد فتأمل نعمة الله عليه في الحفظ والنسيان مع اختلافهما وتضادهما وجعل له في كل واحد منهما ضربا من المصلحة

]مفتاح دار السعادة لابن القيم 788/2[


Urdu

کیا آپ بھولنے کی نعمت جانتے ہیں؟

الحافظ ابن القیم رحمہ اللہ (متوفی 751هجري) نے کہا:

انسان پر سب سے عجیب نعمت بھول جانے کی نعمت ہے!

درحقیقت اگر بھولنا نہ ہوتا تو وہ کسی چیز سے راضی نہ ہوتا (یعنی وہ اس بات کو بھول گیا اور بھول جانے کے بعد اس نے اپنے آپ کو بہتر محسوس کیا) اور نہ ہی کوئی رنج و غم ختم ہوگا اور نہ ہی وہ اپنے آپ کو تسلی دے سکے گا۔  دکھ اور غم ختم نہ ہوں گے، نہ کسی سے حسد کرنے والے سے آزاد ہو گا، اور نہ ہی دنیا کی لذتوں سے لطف اندوز ہو گا اور اپنی تمام کوتاہیوں اور گناہوں کو یاد رکھے گا۔

نہ اسے دشمن سے غفلت کی امید ہو گی اور نہ ہی حسد کرنے والے سے مہلت، لہٰذا اس شخص پر اللہ تعالیٰ کی نعمتوں کو یاد کرنے اور بھولنے کے ساتھ ساتھ ان کے اختلافات اور ان کی مخالفتوں پر غور کریں اور یہ کہ اللہ تعالیٰ نے ہر ایک کے لیے رکھا ہے۔  ان میں سے ایک مختلف قسم کا فائدہ۔’

%d bloggers like this: